بھارت اقوام متحدہ کی قراردادوں اور عالمی قوانین کا احترام کرے:زاہد حسین

فرینکفرٹ(سیّد اقبال حیدر)کونسلیٹ جنرل آف پاکستان فرینکفرٹ نے یومِ استحصال کی مناسبت سے ایک تقریب کا اہتمام کیا،تقریب کی نظامت پاسپورٹ سیکشن کے انچارج فواد بھٹی نے کی،کمرشل کونسلر خواجہ خرم نعیم نے اس دن کی مناسبت سے صدرِ پاکستان عارف علوی اور ہیڈ آف چانسری شعیب منصور نے وزیراعظم عمران خان کا تفصیلی پیغام پڑھ کر سامعین کو سنایا،آخر میں کونسلیٹ جنرل آف پاکستان زاہد حسین نے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا پیغام پڑھ کر سنایا او ر5اگست 2019 کے سیاہ دن کا ذکر کرتے ہوئے نمائیندہ جنگ سے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آج ہم کونسلیٹ میں پچھلے برس5 اگست کو ہونے والے بھارتی اقدامات اور کشمیری بھائیوں پر ہونے والے ظلم کی مذمت کے لئے جمع ہیں،آج کے دن بھارت نے اپنے آئین کے آرٹیکل370 کو ختم کیا تھااور اس کے تحت بھارتی شہریوں کو مقبوضہ کشمیر کے اندر جائیداد اور اور ملازمتوں کے حصول میں مراعات دیں تھیں،بھارتی اقدامات کا بنیادی مقصدمقبوضہ کشمیر کے اندر جو جمہوری نظام ہے،مسلمانو ں کی بڑی تعداد وہاں ہے،اسے ختم کرنا تھاتاکہ وہاں کے رہنے والے اکثریتی مسلمانوں کی آواز کو دبایا جا سکے۔
آج یہاں جمع ہونے کا مقصد کشمیری بھائیوں سے اظہار یک جہتی اورجنت نظیر وادی میں ہونے والے ظلم اور بربریت سے آگاہی دینا بھی ہے جو بھارتی حکومت نے غیر قانونی اقدامات کرتے ہوئے مقبوضہ کشمیر میں رہنے والوں کواپنے ہی گھروں میں محصور کیا،عورتوں،بچوں بوڑھوں پر مظالم کر کے قتل و غارت کا بازار گرم کیا۔مودی حکومت کے یہ اقدامات بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہیں،اقوام متحدہ کی19کے قریب قراردادوں کو بھارتی حکومت نے نظر انداز کیا اور انھیں کوئی اہمیت نہیں دی،بھارت پر لازم ہے کہ اقوام متحدہ اور عالمی قوانین کا احترام کرے،مودی حکومت کا ظالمانہ سرکش رویہ اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کے لئے جدوجہد کرنے والی والی عالمی تنظیموں کے لئے لمحہ فکریہ ہے جبکہ پاکستان مسلسل اقوام متحدہ کی قرارددادوں کی حمائت میں آواز بلند کر رہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں